Pakistan's Urdu Forum (IT Knowledge)

For IT education (education for all)


    ہم ہی میں تھی نہ کوئی بات ایسی یاد نہ تُم کو آ سکے

    Share
    avatar
    kamrankhan143
    Super Moderator

    Posts : 271
    Join date : 2010-03-17
    Age : 33
    Location : Abu Dhabi

    ہم ہی میں تھی نہ کوئی بات ایسی یاد نہ تُم کو آ سکے

    Post by kamrankhan143 on Sun Mar 21, 2010 3:01 pm

    ہم ہی میں تھی نہ کوئی بات ایسی یاد نہ تُم کو آ سکے
    تم نے ہمیں بُھلا دیا، ہم نہ تمہیں بھلا سکے

    تم ہی اگر نہ سُن سکے قصئہ غم، سنے گا کون
    کِس کی زباں کھلے گی پِھر ہم نہ اگر سنا سکے

    ہوش میں آ چُکے تھے ہم جوش میں آ چکے تھے ہم
    بزم کا رنگ دیکھ کر سر نہ مگر اٹھا سکے

    رونقِ بزم بن گئے لب پہ حکایتیں رہیں
    دِل میں شکائتیں رہیں لب نہ مگر ہلا سکے

    شوقِ وصال ہے یہاں لب پہ سوال ہے یہاں
    کس کی مجال ہے یہاں ہم سے نظر مِلا سکے

    ایسا ہو کوئی نامہ بر بات پہ کان دھرسکے
    سُن کے یقین کرسکے، جا کے انہیں سنا سکے

    عجز سے اور بڑھ گئی برہمئیِ مزاجِ دوست
    اَب وہ کرے علاجِ دوست جس کی سمجھ میں آ سکے

    اہلِ زباں تو ہیں بہت، کوئی نہیں ہے اہلِ دل
    کون تیری طرح حفیظ درد کے گیِت گا سکے

    حفیظ جالندھری

      Current date/time is Wed Dec 12, 2018 4:50 am