Pakistan's Urdu Forum (IT Knowledge)

For IT education (education for all)


    یا رب غمِ ہجراں میں اتنا تو کیا ہوتا

    Share
    avatar
    kamrankhan143
    Super Moderator

    Posts : 271
    Join date : 2010-03-17
    Age : 32
    Location : Abu Dhabi

    یا رب غمِ ہجراں میں اتنا تو کیا ہوتا

    Post by kamrankhan143 on Sun Mar 21, 2010 3:00 pm

    یا رب غمِ ہجراں میں اتنا تو کیا ہوتا
    جو ہاتھ جگر پر ہے وہ دستِ دعا ہوتا

    اک عشق کا غم آفت اور اس پہ یہ دل آفت
    یا غم نہ دیا ہوتا، یا دل نہ دیا ہوتا

    غیروں سے کہا تم نے، غیروں سے سنا تم نے
    کچھ ہم سے کہا ہوتا، کچھ ہم سے سنا ہوتا

    امید تو بندھ جاتی، تسکین تو ہو جاتی
    وعدہ نہ وفا کرتے، وعدہ تو کیا ہوتا

    ناکامِ تمنا دل، اس سوچ میں رہتا ہے
    یوں ہوتا تو کیا ہوتا، یوں ہوتا تو کیا ہوتا

    حسرت چراغ حسن

      Current date/time is Sat Nov 18, 2017 1:05 am